Home / بلاگ / ہولو گرام ٹیکنالوجی اور پاکستانی میڈیا کا مستقبل

ہولو گرام ٹیکنالوجی اور پاکستانی میڈیا کا مستقبل

تحریر : حافظ محمد سعد الطاف

انسان کبھی سوچ سکتا تھا کہ ایک انسان ہم میں موجود ہی نا ہو اور اس کو ہم محسوس کر سکیں ؟ یہ نہ یقین آنے والی بات لگتی ہے لیکن سائینس نے جس حساب سے ترقی کر لی ہے اس کو ماننا پڑے گا کہ اب ایک ایسی ٹیکنالوجی آ گئی ہے جس سے دور بیٹھا انسان آپ کے سامنے موجود ہو گا۔ ہولوگرام ٹیکنالوجی ایسی ہی ایک ٹیکنالوجی ہے جس کی مدد سے خلا میں آپ انسان کو محسوس کر سکتے ہیں۔ اس کا استعمال دنیا بھر میں شرو ع ہو چکا ہے لیکن اس کو ابھی پورے طریقے سے آپریشن میں نہیں لایا گیا۔ بلاشبہ جب کوئی نئی ٹیکنالوجی آتی ہے اس میں جدت بھی ضروری ہوتی ہے اسی لیے اس ٹیکنالوجی کو مزید بہتر بنانے کی کوششیں کی جا رہے ہیں تا کہ مزید اچھا نتیجہ حاصل کیا جا سکے۔ اس ٹیکنالوجی کو پاکستان میں سیاسی میٹنگ میں استعمال کیا جا رہا ہے اور پاکستان پیپلز پارٹی نے بلاول بھٹو کو ایک ہی وقت میں مختلف جلسہ گاہوں میں پہنچا کر لوگوں کو حیران اور پریشان کر دیا۔ اس ٹیکلنالوجی کے فوائد کی بات کی جائے تو اتنے فوائد ہیں کہ اگر لکھنے بیٹھو کو ختم نا ہوں ۔ جیسے اگر کسی سیاست دان کو جلسہ کرنا ہے اور لوگ بھی اس کو قریب سے دیکھنا چاہیے ہیں لیکن سیکورٹی ادارے اجازت نہیں دے رہے سیاست دان کو تو اس ٹیکانالوجی کے ذریعے یہ کام بہت آسان ہو سکتا ہے ۔ مزید اگر کسی ٹی وی چینل میں مہمان کو اپنے ساتھ سٹوڈیو میں دیکھانا ہے اس کی مدد نے میلوں دور بندے کو آپ اپنے ساتھ بیٹھا سکتے ہو، اور کسی کو علم بھی نہیں ہو گا کہ یہ شخص سٹوڈیو میں ہے یا اپنے گھر میں۔


میڈیا کا طالب علم ہونے کے ناطے میں اس چیز پر کافی کام کر رہا ہوں کہ آخر اس ٹیکنالوجی کے اتنے فوائد ہونے کے باجود اس کو استعمال میں عام کیوں نہیں کیا جا رہا۔ کیا اس ٹیکنالوجی کی لاگت کافی زیادہ ہے ؟ کیا اس کے لیے کوئی مخصوص ٹرینگ کی ضرورت ہوتی ہے ؟ یا میڈیا اپنا مستقبل اتنا روشن نہیں دیکھا رہا جس کہ وجہ سے اس ٹیکنالوجی کو نظر انداز کر رہا ہے ۔ یہ چند سوالات میرے دماغ میں اس ٹیکنالوجی کو لے کر پیدا ہوئے ہیں اور ان سوالوں کی کھوج میں لگا ہوا ہوں۔ اگر ان سوالات کے جوابات مل جاتے ہیں تو یقین کریں میڈیا میں اس ٹیکنالوجی سے ایک ایسا طوفان آ جائے گا جس سے نوکریاں بھی بہت پیدا ہوں گی اور اس کے ساتھ ساتھ پاکستان ان چند ممالک میں ہو گا جواس ٹیکنالوجی کو استعمال کر رہے ہوں گے۔

Facebook Comments

About Web Desk